ہیپاٹائٹس سی کے مراحل

پہلا مرحلہ : شدید انفیکشن (پہلے چھ مہینے)

ہیپاٹائٹس سی وائرس خون میں داخل ھو کر جگر تک پہنچ جاتا ہے اور پھر جگر کے خلیوں میں انفیکشن پیدا کر کے پھیلنا شروع کردیتا ہے- تقریباً 20 فیصد لوگ وائرس لگنے کے چند مہینوں کے اندر اس سے خود بخود نجات حاصل کر لیتے ہیں.

دوسرا مرحلہ : دائمی انفیکشن

تقریبا 80 فیصد لوگ جو اس وائرس کا شکار ھوتے ہیں خود اس سے نجات حاصل نہیں کر سکتے اور دائمی انفیکشن میں مبتلا ھو جاتے ہیں.

 تیسرا مرحلہ : ورم اورفائبروس (Fibrosis)

وائرس جگر کے خلیوں کو مارتے ھوۓ تیزی سے پھیلتا ہے اور یہ نقصان جگر کے ورم کا سبب بنتا ہے- وقت گزرنے کے ساتھ یہ نقصان جگر کے ٹشو پر زخم پیدا کردیتا ہے جسکو "فبروسس" کہتے ہیں- وائرس بہت آہستہ آہستہ پھیلتا ہے- اکثر 20 سے 30 سال کے دورانیہ میں اور ھو سکتا ہے کہ اس دوران کسی قسم کی بھی علامات ظاہر نہ ھوں.

چوتھا مرحلہ : سیروسس (Cirrhosis)

دائمی انفیکشن کے 20 سال سے 30 سال کے بعد اندازاً ھر پانچ متاثرہ افراد میں سے ایک کو جگر پر گہرے زخم اور جگرکی سختی کا مرض ھو سکتا ہے جسکو سروسس کہا جاتا ہے- کچھ لوگوں کا جگر پھر بھی صحیح کام کرتا رہتا ہے اور کوئی علامات ظاہر نہیں ہوتیں- جبکہ کچھ لوگوں میں سروسس جگر کے عام افعال کو متاثر کرنا شروع کر دیتا ہے- بیماری کےاس مرحلے پرزخموں کے ہر طرف پھیلنے سے جگر سکڑ جاتا ہے اور جگر کی ناکامی کا خطرہ پیدا ھو جاتا ہے- اس مرحلے پر جگر کی پیوندکاری (ٹرانسپلانٹ) کی ضرورت ھو سکتی ہے- سروسس میں مبتلا پانچ سے دس فیصد لوگوں کو جگر کا سرطان (کینسر) ھو سکتا ہے-