ہیپاٹئٹس سی خون سے خون کے رابطہ کے نتیجے میں پھیلتا ہے-

ہیپاٹئٹس سی اس وقت پھیلتا ہے جب کسی وائرس زدہ شخص کا خون کسی دوسرے شخص کے دوران خون میں چلا جاۓ- یہ عام طور پر پھٹی ہوئی جلد اور ناک، منہ اور مقعد کی پھٹی ھوئی نرم باریک جھلیوں کے ذریعے ہوتا ہے- ہیپاٹئٹس سی کا وائرس کافی توانا ھوتا ہے اور جسم سے باہر کئ دن تک رہ سکتا ہے-اس لیے یہ وائرس خشک خون کے ذریعے بھی منتقل ہو سکتا ہے-

یہ وہ کچھ طریقے ہیں جن سے یہ وائرس آپ کو لگ سکتا ہے-

غیر محفظ طبی عمل- جیسے کہ آپریشن، خون کی منتقلی، ٹیکے لگانے کا سامان جو جراثیم سے پاک نہ ھو-

خون کی منتقلی- اگر آپ نے 1992 سے پہلے کینیڈا میں کبھی خون لگوایا ھو تو بھی خطرہ کافی زیادہ ھو سکتا ہے کیونکہ 1992 سے پہلے خون کی معمول کی چھان بین میں اس وائرس کی چھان بین شامل نہیں تھی- اگر خون کی مکمل چھان بین نہ کی جاۓ تو خون کی منتقلی خطرے کا باعث ھو سکتی ہے - اگر کینیڈا آنے سے پہلے آپ نے کبھی خون لگوایا ہے تو ممکن ہے کہ اس کی مکمل چھان بین نہ کی گئ ھو-

مشترکہ سرنجوں اور دیگر سامان سے جو ادویات اور منشیات بنانے اور لگانے کے لیے استعمال کیا گیا ھو اور اس پر خون موجود ھو بعض اوقات خون کی مقدار اتنی کم ھو سکتی ہے کہ آپ کو نظر بھی نہ آۓ-اسی طرح منشیات کے لیے استعمال ھونے والا سامان شیشے کےپائپ، نلییاں، یا پھر کرنسی نوٹ جو لوگ منشیات کو سانس یا ناک کے ذریعے کھیچنے میں استعمال کرتے ہیں ان پر بھی خون موجود ھو سکتا ہے جس کی وجہ کوئی ناک سے آنے والے خون کے قطرے یا پھٹا ھوا ھونٹ ھو سکتے ہیں-

ٹیٹو بنا نے، جسم چھیدنے یا آکیپنکچر کا سامان- سیاہی، سویاں یا پھر دیگر سامان اگر جراثیم سے پاک کیے بغیر دوبارہ استعمال کیا جاۓ تو اس پر بھی خون موجود ھو سکتا ہے جس سے ہیپاٹئٹس سی کی منتقلی کا خطرہ ھوتا ہے-

ذاتی سامان کا مشترکہ استعمال مثال کے طور پر استرا، ریزر، دانت صاف کرنے کا برش یا ناخن کاٹنے کے آلات پر بھی اگر خون موجود ھو تو وہ ہیپاٹئٹس سی کی منتقلی کا باعث بن سکتے ہیں-اسی طرح اس بات کا بھی امکان ہے کہ نائی کی دوکان میں استعمال ہونے والا سامان بھی جراثیم سے پاک نہ کیا گیا ھو-

غیر محفوظ جنسی عمل جس میں خون موجود ھو- مثال کے طور پر حیض کے دوران جنسی عمل، تشدد آمیز جنسی عمل یا مقعد میں کیے جانے والے جنسی عمل کے دوران وائرس منتقل ھو سکتا ہے-

حمل یا دوران پیدائش- حمل یا دوران پیدائش بچے کو ہیپاٹئٹس سی کی منتقلی کے بہت ہی کم امکان ھوتے ہیں- چھاتی سے دودھ پلانے کے عمل میں بھی وائرس کی منتقلی کا کوئی امکان نہیں ھوتا سواۓ اس کے کہ چھاتی پر کوئی زخم ھو یا جلد پھٹی ھوئی ھو-